نوازشریف کی زندگی کوخطرات لاحق ہیں، ڈاکٹر عدنان

اگرانجیوپلاسٹی ممکن نہ ہوئی تو دوبارہ بائی پاس سرجری کرنا پڑسکتی ہے، ذاتی معالج نوازشریف

اگرانجیوپلاسٹی ممکن نہ ہوئی تو دوبارہ بائی پاس سرجری کرنا پڑسکتی ہے، ذاتی معالج نوازشریف

لاہور: سابق وزیراعظم کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کا کہنا ہے کہ نوازشریف کی زندگی کوخطرات لاحق ہیں اور عارضہ قلب ان کی زندگی کے لیے خطرہ ہے۔

مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف کے لیے آغا خان یونیورسٹی اسپتال سے ایک ٹیم کراچی سے آئی، آج کا مقصد آغا خان اسپتال کے ڈاکٹرز سے ملاقات، بیماری کو سمجھنا اور ہسٹری لینا تھا۔

ڈاکٹر عدنان نے کہا کہ نوازشریف کی زندگی کوخطرات لاحق ہیں اور عارضہ قلب ان کی زندگی کے لیے خطرہ ہے، دل کی شریانوں میں بلاکج ہے اگر اسٹنٹنگ نہ ہو تو ہوسکتا ہے بائی پاس سرجری کی ضرورت پڑ جائے، دماغ کو خون سپلائی کرنے والے شریانوں میں بھی رکاوٹ ہے، دل کا ایشو اور دماغ کو خون کی سپلائی میں کمی اہم مسائل ہیں۔

ڈاکٹر عدنان کا کہنا تھا کہ نوازشریف کے بیرونی معالج سے بھی رابطے میں ہیں، جس سطح پر انہیں اسپتال داخل کرنے کی ضرورت پڑے گی انہیں داخل کردیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں